ہم تو ہیں پردیس میں، دیس میں نکلا ہوگا چاند- اپنی رات کی چھت پر کتنا تنہا ہوگا چاند

خاور صاحب ! آپ کا شکریہ کہ آپ نے مجھ جیسے حقیر کو پھر بھی یاد رکھا ،ا پنی مصروفیت ، اور علالت کی وجہ سے آپ مجھ سے نہ مل سکے ، بلکہ مجھے اس بات کا رنج ہے کہ میں آپ سے ملنے کا وقت نکال نہیں پایا … اوپر سے تلونڈی ڈاٹ نیٹ سے بھی معزرت خواہ ہوں ، بچوں نے کمپیوٹر میں خرابی کر دی تھی ، اس کو ٹھیک کروانے کے لئے بھی وقت نکل نہیں پایا ، وہ تو بھلا ہو چھوٹے بھائی اشفاق صاحب کا سعودیہ سے چھٹی پر آے ہوے ہیں ، کہنے لگے میرا لیپ ٹاپ استمال کر لیں، تو اسے کھول کر سب سے پہلے تلونڈی ڈاٹ نیٹ کو ہی چیک کیا ،اور آپکا پیغام پڑھا ، یہ وائی فائی ہے اس لئے سردیوں کی رات میں اپنے بستر پر بیٹھ کر آپکو جواب لکھ رہا ہوں، مصطفیٰ بٹ آف سپین نے بھی آپکا سلام مجھے پہنچا دیا تھا، افسوس کہ آپ جتنے شارٹ ٹائم کے لئے آے ، کہ تلونڈی کی سرسوں کا ساگ ابھی تیار نہیں تھا، گوجرانوالہ سبزی منڈی سے ساگ آ تو رہا ہے پر وہ مزیدار نہیں ہے ، الله آپ سب پردیسیوں کو سلامت رکھے آمین . دعا گو – علامہ

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *